صحت

چین نے تین سیکنڈز میں بچوں کا معائنہ کرنے والا روبوٹ تیار کر لیا

روبوٹ میں جدید کیمرہ اور تھرمامیٹر نصب ہے جو بخار اور دیگر امراض کو نوٹ کرسکتے ہیں۔ اس روبوٹ کا مقصد ڈاکٹر یا تربیت یافتہ سٹاف کم ہونے کی صورت میں مرض کی موجودگی کے شک کو ظاہر کرنا اور اس سے ڈاکٹروں کو آگاہ کرنا ہے۔پروفیسر کیرن پینیٹا نے روبوٹ کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایسی آبادی کے لیے ایک اہم ایجاد ہے جہاں تربیت یافتہ ڈاکٹروں کی کمی ہوتی ہے۔ ایسے روبوٹ سے کسی جگہ مرض کے پھیلنے اور وبا کے پھوٹنے پر بھی نظر رکھی جا سکتی ہے۔روبوٹ کی قیمت 6 ہزار سے 8 ہزار امریکی ڈالر (8 سے 10 لاکھ پاکستانی روپے) ہے اور اس کا قد 100 سینٹی میٹر کے لگ بھگ ہے۔ روبوٹ ڈیٹا آن لائن مجاز اداروں اور ڈاکٹروں تک بھیج سکتا  ہے

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close